ਟੈਗ » Ghazal

غزل#نا اُمیدی سوا ہو خِفتان بن جاتی ہے

نا  اُمیدی  سِوا  ہو   خفتان  بن   جاتی   ہے

غفلت   ناکامی   کا   نشان   بن   جاتی   ہے

چلن  زمانے  کے  ہیں  جتنے چلنا  سیکھو

وگرنہ    زندگی    بُحران    بن   جاتی   ہے

نیکیوں  کا  ڈھب   انسانیت   کی  فلاح  ہے

نری  بدی  آماجگاہِ  شیطان  بن  جاتی   ہے

علم ہوگر حِلم سے خالی توشر کے سوا کیا؟

تعلیم  بھی انسانیت  پر بہتان  بن  جاتی  ہے

چلو   تو !  اسلاف  کے  طریق  پر دنیا  میں

دیکھو  آخرت  کیسے مہربان  بن  جاتی  ہے

نبی ﷺ کی  سُنّت  پر عمل  کر کے  تو دیکھو

سچ مُچ زندگی عظمت  کا نشان  بن جاتی  ہے

جن کے دل  ہیں  محبتِ رسول  ﷺ سے  خالی

سکندر ؔ کہدو!جَہَنّم اُن کی پہچان بن جاتی ہے

سکندرؔ

Poetry

ishq Hai Tujhko..

इश्क़ है तुझको, तेरा फिर मुस्कुराना लाजमी है ।
बे-इन्तहां हक़, तेरा मुझपर जताना लाजमी है ।।
Shayari

پر

دنیا نیچے چھوڑنے کو لوگ لگائیں پر
مٹی اندر جو رچی ہے وہ کون چھپائے پر

سو سو رنگ بدلتے موسم من کے اندر سوئیں
نیلے امبر کالے بادل تن میں سمائیں پر

تلخ زبانوں سے کٹتے موتی بکھر کے زچ ہوجائیں
ہستے چہرے بھوری آنکھیں روح کو رلائیں پر

سرخ گلابی مہک سے روشن گل گلشن بن جائیں
روکھے سوکھے پیلے پتے دل کو بہلائیں پر

اندھیر نگر میں روتے چراغ آنگن کو بچائیں
دن کے سوتے سورج سارے راگ لگائیں پر۔

Poetry

ગઝલ : ડૉ.કેતન એ.કારિયા

એક વાતે જ ફાવી શકો,

આંસુ પર હક જતાવી શકો!

આયનામાં પડે ડાઘ તો,

આયનાને બતાવી શકો?

ઓરડાંની સજાવટ ગમી,

જિંદગી પણ સજાવી શકો?

છે અછત‘ને ઘટાડો સતત,

માણસાઈ ટકાવી શકો?

સત્યની તો અપેક્ષા કરો,

સત્યને જો પચાવી શકો.

છંદ પુસ્તક થકી આવડે,

શેરિયત ક્યાંથી લાવી શકો?

Gujarati

غزل#ترکِ تعلق سہی پر کرتا ہے بہت یاد مجھے#

ترکِ تعلق  سہی  پر کرتا ہے  بہت  یاد  مجھے

 اُس پر اتنا اعتبار کیوں  ہے ؟ دلِ ناشاد  مجھے

عشق  کا  امتحان  جاں گُسل   ہے  ،  سہل  نہیں

کامیابی  کو بار بار کہنا  پڑتا ہے خیر باد مجھے

دہر میں  گرم  و سرد  نے  سکوں  نہ  لینے  دیا

اپنے امتحان  کا  ایک  ایک  پل  ہے  یاد  مجھے

کاش  !  میرا   پیمانِ   وفا   ہی   بھانپ   لیا   ہوتا

تیرا لہجہ  تھا  بے  اثر ،پر لگا اپنی فریاد مجھے

آہ !  رونے  دے  شب ِ تنہائی  کا  ماتم  نہ  پوچھ

تیری  داد رسی  نہیں  کر سکتی  با مُراد  مجھے

آبرو  رہ  جائے عشق  کی  دیوانے کی  خیر ہے

طوفانوں  سے  لڑجانے  میں  نہیں  اُفتاد  مجھے

دل کا چمن کچھ  اس طرح سے اُجڑا  ہے سکندرؔ

یادِ عشقِ پیشگاں بھی نہیں کر سکتی  آباد مجھے

سکندرؔ

Poetry

Love is a Song: Ghazal

“Love is raw as freshly cut meat,

mean as a beetle on the track of dung”

~ Jim Harrison  from Songs of Unreason

It can be painful and raw, sometimes it’s wrong, but love is a song.

285 more words
Poetry